Asking For A Lift - سواری کی درخواست کرنا

Muntzir: Excuse me, sir, would you give me a lift up to Model Town Mor? منتظر: معاف فرمائیے ،جناب۔ کیا آپ مجھے ماڈل ٹاؤن موڑ تک لفٹ دیں گے؟
 
Akhta: Pleasure sir, have a seat in my car. اختر: کیوں نہیں جناب۔ آپ میری کار میں بیٹھ سکتے ہیں۔
 
Muntzir: Where are you going, bye the way? منتظر: ویسے آپ جا کہاں رہے ہیں؟
 
Akhtar: I shall go up to Kenchi Phattak. I shall drop you at Model Town Mor. اختر: میں قینچی پھاٹک تک جاؤں گا۔ میں آپ کو ماڈل ٹاؤن موڑ پر اُتار دوں گا۔
 
Muntzir: Sorry for incovenience. منتظر: تکلیف کے لئے معذرت چاہتا ہوں۔
 
Akhtar: Not mention sir, it is not my special service for you. اختر: کوئی بات نہیں جناب ، میں آپ کو کونسا سپیشل لے جارہاہوں۔
 
Muntzir: It's great of you that you stopped for me. Most people fear burglary on part of the person seeking lift. منتظر: آپ کی نوازش ہے کہ آپ میرے لئے رک گئے ، زیادہ ترلوگ ڈرتے ہیں۔سواری مانگنے والے وارداتیں بھی کر جاتے ہیں۔
 
Akhtar: That's right. But I can judge the person from the very appearance. اختر: آپ بجا فرماتے ہیں ،لیکن میں شکل وصورت اور چال ڈھال سے بندے کو جانچ لیتا ہوں۔
 
Muntzir: Thanks for thinking good of mine. There comes my stop. Please drop me here. Let me serve you with tea or some cold drink. منتظر: میرے بارے میں اچھے تاثراترکھنے کا بہت شکریہ۔ میراسٹاپ آگیا ہے۔پلیز مجھے اتاردیں۔ آیئے چائے یا بوتل وغیرہ لےلیں۔
 
Akhtar: No sir, thank you. Actually, I am in a hurry. اختر: نہیں جناب، آپ کا شکریہ۔ مجھے اصل میں جلدی تھی۔
 
Muntzir: I am ever so thanful to you. منتظر: میں آپ کا بے حد ممنون ہوں۔